ہٹ ڈرامہ سیریل “میرے پاس تم ہو“کی جگہ اے آر وائے ڈیجیٹل کا ڈرامہ“ جھوٹی “کی پہلی قسط اقراء عزیز کی اوور ایکٹنگ کی نظر ہو گئی

0
89

پاکستان میں بڑے عرصے کے بعد میرے پاس تم ہو نے مقبولیت کے بعد تمام ریکارڈ توڑ دیئے اور اے آر وائے ڈیجیٹل نے ریٹنگز میں نئے ریکارڈ قائم کیے۔ جیسے ہی “میرے پاس تم“ ہو کی آخری قسط آن ائیر گئی۔
جہاں بہت سے ناظرین نے ڈرامے کی اینڈنگ پر اعتراضات اٹھائے وہیں وہ اسکی جگہ آنیوالے ڈرامہ“ جھوٹی “کی پہلی قسط دیکھنے کیلئے بے تاب تھے۔ ہم بھی وقت پر گھر پہنچ گئے۔
حسب عادت گھر کے تمام بزرگ اور نوجوان موجود تھے۔ اورآخر کار ‘جھوٹی’ کی پہلی قسط آن ائیر ہو گئی۔

اقراء عزیز کی یاسر حسین کی شادی کے بعد یہ پہلا بڑا سیریل تھا۔ اور اس میں سینیئر اداکار توقیر ناصر اور شائستہ جیسی سینیئر ترین فنکارہ کافی عرصہ بعد ٹی وی سکرین پر نظر آئے۔ پرومو میں دکھایا گیا کے یاسر حسین بھی اس سیریل کی کاسٹ میں موجود ہیں۔
“ جھوٹی“ کی کہانی علی معین نے لکھی ہے۔ اور ڈائریکشن کے فرائض سید دانش رضوی نے نبھائے ہیں۔ کیمرہ ورک کلیم حسین صدیقی کا ہے۔ اور پروڈیوسر اے آر وائے کے سی ای او جرجیس سیجا کے بھائی عبداللہ سیجا ہیں۔

ڈرامے کی کہانی ایک متوسط طبقے کے گھرانے کی ہے۔ اقراء عزیز اس گھر میں بیٹی کا رول نبھا رہی ہے۔ ایک بھائی شادی شدہ ہیں۔ اورایک بھائی کنوارہ ہے۔ باپ کا رول توقیر ناصر اور ماں کا رول اسماء عباس نبھا رہی ہیں۔ پہلی قسط کافی تیز تھی اور کرداروں کے تفصیلی تعارف سے پہلے کہانی کو ناظرین کے سامنے ایکسپوز کر دیا گیا۔ پہلی قسط اقراء عزیز کے گرد گھومتی رہی۔ اقراء عزیز کے گھر والے اسکی فوراً شادی کرنا چاہتے ہیں اور اس کے خواب کسی امیر زادے سے شادی کرنے کے ہیں۔ڈرامے کا آغاز بھی ایک خواب سے ہے۔ اور ایک بڑے بنگلے میں ماڈل واک کرتی ہوئی اقرا عزیز آرہی ہیں۔ ماں جب بیٹی کو خواب سے جگاتی ہیں تو اقرا کا ماں سے دو دفعہ کہنا کے کیا تکلیف ہے، کافی تکلیف دہ تھا، لگتا اردو لکھنے کی روایات بھولتے جا رہے،

احمد علی بٹ ایک پرچون کی دکان چلا رہے ہیں۔ اور نرما سے رشتہ جوڑنا چاہتے ہیں۔
لیکن اقرا عزیز اس پرچونیے سے بالکل بھی رشتہ جوڑنا نہیں چاہتی، اور سارے گھر کو آگے لگایا ہوا ہے، جہاں اقرا کو ایک منہ زور اور بدتمیز دکھانے کی کوشش کی گئی، لیکن اقرا نے اپنے کردار کیساتھ ناانصافی کی ہے اور پوری قسط میں انکی اوور ایکٹنگ سر چڑھ کر بولتی رہی، دیکھتے ہیں کے اب اگلی قسط میں اپنے کردار کو کیسے نبھاتی ہیں، توقیر ناصر ایک بڑے فنکار کو چھوٹے کردار میں تول دیا گیا، کیمرہ ورک بھی ایوریج تھا،

ہمارے ڈائریکٹرز کو سمجھنا ہو گا کے پارٹی صرف ناچ گانا نہیں ہوتا، کمزور پارٹی سین کے بغیر بھی بخوبی اس پارٹی سین کو کیا جا سکتا تھا، جس میں اقرا کو ڈرنک دکھانا مقصود تھا،
اب پچھلے کچھ عرصہ میں ڈرامے ایک ہی مضبوط کردار کے گرد گھومنے لگے ہیں، جیسے ‘جھوٹی’کے تقریبا ہر سین میں اقرا عزیز موجود ہیں، ‘میرے پاس تم ہو’ میں جیسے ہمایوں سعید تھے-

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here