ایڈ ایشیا 2019 – دُوسرا دن: نیاز ملک کی آنسو میں ڈُوبی باتوں نے ایڈ ایشیا 2019 کے سامعین کو رُلا دیا، افسوس ہال کا بیشتر حصہ خالی تھا

0
954

ایڈ ایشیا کا آج دُوسرا بھر پُور دن تھا۔ ڈیلیگیٹس، میڈیا اور مقامی سامعین کی صُبح کیوقت حاضری قابل دید لیکن لنچ کیبعد ہال تقریباً آدھے خالی ہی رہے، جس نے کانفرنس کی رُوح کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا۔ آج جہاں شہزاد نواز نے دلچسپ گُفتگو کی Bond Advertising کی سیما جعفر، فیشن آئیکون فریحہ الطاف اور ای بی ایم کی ایم ڈی اور سی ای او زلیف مُنیر نے Women and Power پر بھی سیر حاصل گُفتگُو کی، M&C Saatchi کے سی ای او نے اپنی کامیاب کیمپیئنز کی کہانی سُنائی، وہیں ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنیوالی ثمینہ بیگ نے بھی حاضرین کی زبردست داد وصُول کی، رضا جعفر کی تقریر جہاں بہت سُوں کیلیے باؤنسر تھی وہیں سب سے زیادہ سوالات بھی اُنھیں کے حصے میں آئے۔

لیکن آج جس شخصیت نے مُسلسل اپنے حصار میں رکھا وہ زونگ کے سابق ڈپٹی سی ای او نیاز ملک تھے جنکی motivational اور heart breaking باتوں سے ضبط کے باوجُود آنسووں کو ضبط کرنے میں ناکام رہا، پتا نہیں کیوں محسوس ایسے ہو رہا تھا جیسے وہ الفاظ سے نہیں آنسووں سے باتیں تراش رہے ہیں، ٹشو ناں ہونیکی
وجہ سے آنسو روکنا کوئی آسان کام نہیں تھا۔ اُنھوں نے بتایا کے کسطرح ایک بڑے حادثے کیبعد یکدم گردن کے نیچے دھڑ سے معزُور ہو گئے اور کسطرح وہ ٹُوٹ گئے اور پھر کسطرح ٹُوٹے ہُوئے شیشوں کیطرح اُنھوں نے اپنے آپ کو یکجا کیا۔ بُلھے شاہ کے جُملے کے “اک نُکتے وچ گل مُکدی اے” کو اپنی زندگیوں پر لاگُو کریں، اپنے آپ سے بات کرنا سیکھیں۔ آپ ہی اپنے بڑے مُحسن ہو سکتے ہیں۔

جہاں ابھی بہت سے سوالات تشنگی چھوڑ گئے، وہیں جاوید جبار صاحب کے سوال نے بھی ہمت بندھائی کے کارپوریٹ ورلڈ ابھی اتنی تنگ نظر نہیں ہوئی۔ بلا شُبہ نیاز ملک کی باتیں زندگی کا سبق تھیں جس سے بادل نخواستہ بُہت سے ناظرین با مُشرف ناں ہو سکے، زیادہ تر ڈیلیگیٹ لاھور کی سیر پر نکل گئے تو باقی آرام کی غرض سے شاید ہوٹل واپس چلے گئے، منُتظمین سے درخواست کے وہ ڈیلیگیٹس کا پابند کریں کے وہ ایڈ ایشیا کانفرنس کے اختتامی لمحات تک ناں چھوڑیں، جہاں میاں منشا جیسے بُزرگ، جاوید جبار، اور زلاف مُنیر کانفرنس کے اختتام تک بیٹھ سکتے ہیں تو نوجوان شُرکا کیوں نہیں؟

آج کا دن نیاز ملک کے نام

Spoiler Alerts:

پیپسی سپانسر ہے تو شُرکاء کیلیے پانی ختم نہیں ہونا چاہیے، آپکے فریزرز میں پیپسی بولڈ کیساتھ ساتھ پیپسی ریگُولر بھی ہونی چاہیے، اپنی ایکٹیویشن ٹیم سے کہیں کے کانفرنس کے اختتام تک آپکی مصنوعات اور ٹیمیں موجُود ہونی چاہیں۔

نیسلے کانفرنس سے بھر پُور برانڈنگ کر سکتا تھا، لیکن کمزور ا یکٹیویشن سرد موسم اور بھر پُور طلب کے باوجُود نیس کیفے ناں مل سکی۔

تحریر: عمران ملک

Pics from the Day-2:

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here