کیا میاں شہباز شریف سیاست سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کرنیوالے ہیں؟ جاوید چوھدری کا کالم میں حیرت انگیز انکشاف

0
187

میری گزشتہ ہفتے میاں شہباز شریف سے ملاقات ہوئی‘ یہ اپنے بڑے بھائی کی صحت اور قید پر بہت پریشان تھے‘ میں نے ان سے کہا ”آپ فیصلہ کیوں نہیں کر لیتے“ یہ بولے ”میں مر جاﺅں گا لیکن بھائی کا ساتھ نہیں چھوڑوں گا“ میں نے پوچھا ”بڑے میاں صاحب کا ایشو کیا ہے؟“ یہ دکھی لہجے میں بولے ”ساتھی‘ یہ ہر بار غلط لوگوں کے نرغے میں آ جاتے ہیں‘ یہ لوگ انہیں فوج کے سامنے کھڑا کر دیتے ہیں‘ ہم فارغ ہو جاتے ہیں‘ جیلوں میں جا گرتے ہیں اور کھڑا کرنے والے ساتھی غائب ہو جاتے ہیں۔

آپ آج دیکھ لیں میاں نواز شریف اور فوج کو لڑانے والے لوگ آج کہاں ہیں؟ یہ نواز شریف کی حمایت میں منہ سے ایک لفظ تک نہیں نکال رہے‘ یہ پارٹی کے اجلاس میں بھی شریک نہیں ہوتے“ میں نے پہلی مرتبہ انہیں معمول سے زیادہ دکھی اور بیمار دیکھا‘ یہ بار بار کہہ رہے تھے ”میں ہر بار اپنے بھائی کو سمجھاتا ہوں ہم نے فوج کے ساتھ چلنا ہے‘ ہم اسٹیبلشمنٹ کو سائیڈ پر رکھ کر پرفارم نہیں کر سکیں گے‘ آپ صرف اور صرف پرفارمنس پر توجہ دیں‘ یہ ملک اپنے قدموں پر کھڑا ہو گیا تو سب ٹھیک ہو جائے گا ورنہ سب بکھر جائے گا مگر یہ نہیں سمجھتے“۔

میں ایک گھنٹہ ان کے پاس بیٹھا رہا‘ مجھے محسوس ہوا میاں شہباز شریف تھک چکے ہیں‘ یہ اب اس صورت حال میں مزید نہیں رہ سکیں گے‘ مجھے محسوس ہوا یہ سیاست سے ریٹائرمنٹ کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں‘ یہ بھائی کو جیل سے نکالنے کی کوشش کریں گے‘ اس کے لیے کسی کے پاﺅں بھی پڑنا پڑا تو یہ پڑ جائیں گے لیکن اگر میاں نواز شریف نے اس کے باوجود اپنی سوچ تبدیل نہ کی‘ مریم نواز کو سیاست سے واپس نہ کھینچا‘ ووٹ کو عزت دو کا نعرہ بند نہ کیا اور یہ سڑکوں اور دھرنوں کی سیاست سے تائب نہ ہوئے تو میاں شہباز شریف سیاست سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کر دیں گے۔

یہ چپ چاپ لندن جائیں گے‘ علاج کرائیں گے‘ واک کریں گے‘ کتابیں لکھیں گے اور یوں سیاست میں پرفارمنس کا باب ہمیشہ کے لیے بند ہو جائے گا‘ خواجہ آصف بھی اس بار ان کا ساتھ دے رہے ہیں اور خواجہ سعد رفیق بھی جیل میں بیٹھ کر سوچ رہے ہیں ”یہ ہم ہر دو تین سال بعد کیا کر دیتے ہیں؟“ پیچھے رہ گئے احسن اقبال یہ البتہ سڑکوں پر پارٹی کی قیادت کریں گے‘ میاں شہباز شریف حقیقتاً قوم کا نقصان ثابت ہوں گے‘ہماری پوری پولیٹیکل لاٹ میں ان جیسا کوئی دوسرا شخص موجود نہیں‘ افسوس یہ وفاداری اور بھائی کی محبت میں ضائع ہو رہے ہیں۔

بشکریہ جاوید چوہدری

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here