فلم میکر شمعُون عباسی کی آدم خوری پر بننے والی فلم “دُرج” پر پابندی کیوں لگی؟

0
1350

پاکستان کے نامور ایکٹر اور پروڈیوسر شمعُون عباسی کی فلم دُرج ریلیز سے پہلے ہی تنازعات کا شکار ہو گئی۔ عباسی نے بتایا کے پنجاب اور سندھ کے سینسر بورڈ ز نے پہلے اسے کلیئر کر دیا لیکن وفاقی سینسر بورڈ نے مُسترد کر دیا۔ ہمیں سمجھ نہیں آ رہی کے پہلے فلم کو پاس کر دینے کیبعد مُسترد کیوں کیا گیا۔

شمعُون عباسی نے کہا کے دُنیا بھر میں فلم گیارہ اکتُوبر کو جبکہ پاکستان میں اٹھارہ اکتُوبر کو ریلیز کیلیے تیار تھی۔ لیکن اب فلم سے پیار کرنیوالوں کو افسوس ہو گا۔ اگر سینسر بورڈ نے کوئی ٹھیک منطق ناں دی، کے فلم کو مُسترد کیوں کیا گیا۔

ہمارا فلم میں انسانی گوشت کھانے کو بالکُل پروموٹ نہیں کیا گیا بلکہ اُن لوگوں کی سوچ اور خیالات کو دکھایا گیا ہے تاکہ لوگ اس سے رہنُمائی لے سکیں۔
مرکزی فلم سینسر بورڈ کے چیئرمین دانیال گیلانی کا کہنا تھا کے فلم میں بُہت سے ایسے سین ہیں جو پبلک کیلیے ٹھیک نہیں، اور اس طرح کے موضوع کو پاکستان
میں پروموٹ نہیں کیا جا سکتا۔

عباسی کا کہنا تھا کے اُنھوں نے اس فلم کو ورلڈ وائیڈ ریلیز کرنا تھا اور پاکستان میں ریلیز کا کوئی پلان نہیں تھا، لیکن ٹریلر کی ریلیز کیبعد پاکستان کے ناظرین کا پریشر بڑھا کے پاکستان میں اسکو ریلیز کیا جائے۔
عباسی کا کہنا تھا کے وہ اپیل کرنے جا رہے ہیں اور اُمید رکھتے ہیں کے پاکستانی ناظرین اس فلم ناں صرف جوق در جوق دیکھنے آئینگے بلکہ پسند بھی کرینگے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here