مُبشر لقُمان نے چینل 24 نیوز کو خیر باد کہہ دیا، وجُوہات کیا اور اگلا پڑاؤ کیا ہو سکتا ہے؟

0
412

مُبشر لقُمان نے چینل 24 نیوز کو خیر باد کہہ دیا، تیس ستمبر کو آخری شو ریکارڈ کروائیں گے
پاکستانی میڈیا کے مُتنازعہ اور کسی دور میں ریٹنگ کے بادشاہ رہنے والے مُبشر لُقمان نے آخرکار چینل 24 کو چھوڑ دیا۔ مُحسن نقوی نے جہاں سٹی 42 جیسے چینل کا کامیاب بنایا، لیکن نیشنل نیٹ ورک کو کامیاب ناں کر سکے، وجُوہات کیا ہوُسکتی ہیں؟ اس پر تفصیل سے تجزیہ پھر کبھی سہی لیکن اپنے میڈیا میں مضبُوط تعلقات اور سی این این بیک گراؤنڈ بھی چینل 24 کو دوام ناں بخش سکی۔ ڈاکٹر شاھد مسعُود، نجم سیٹھی، ڈاکٹر عامر لیاقت جیسے بڑے بھاری بھرکم نام بھی اس چینل کو فرنٹ رنر ناں بنا سکے، جُگن کاظم کیساتھ مارننگ شو کا تجربہ بار آور ثابت ناں ہو سکا۔

مُبشر لُقمان کے آنے سے یہ اُمید پیدا ہوئی تھی کے ماہانہ تقریباً ساٹھ لاکھ کے خرچے کے بدلے تین چار کڑور کا بزنس تو آ ہی جایا کریگا لیکن یہ تجربہ بھی بُری طرح ناکام ہُوا اور مُبشر لُقمان چینل پر بوجھ لگنے لگے۔ مُبشر لُقمان کُچھ عرصہ سے اپنا لوہا نہیں منگوا پا رہے۔ اب وہ ریٹنگز سے کوسوں پیچھے رہ گئے ہیں۔ شارجہ کی ایک ایڈورٹائزنگ ایجنسی سے اپنے کیریئر کا سٹارٹ کرنیوالے مُبشر لُقمان نے کیئریئر

میں کافی اُتار چڑھاؤ دیکھے، دُنیا میں ملک ریاض کے انٹرویو پر آف کیمرہ سکینڈل بنا۔ پہلا پہلا پیار نامی فلم فلاپ ہوئی، ایڈورٹائزنگ ایجنسی میں بحثیت کاپی رائیٹر بھی کام کیا۔ اور کوکا کالا، نیسلے کے مُختلفُ برانڈز ہر کام بھی کیا۔ اپنے صحافتی کیریئر کا آغاز بزنس پلس سے کیا اور یہی اُنکی پہچان بن گیا۔ اسکے بعد مُشرف دور میں نگران صوبائی وزیر بھی رہے۔
پھر کھڑا سچ کا سفر اے آر وائی، دُنیا، ایکسپریس اور سماء سے ہوتا ہُوا چینل 24 پر اختتام ہُوا۔
ایچی سونین مُبشر لُقمان نے اپنی بقیہ تعلیم گورنمنٹ کالج لاھور سے حاصل کی۔

مُبشر لُقمان ایک نڈر اور بے باک صحافی رہے ہیں، جنگ کے میر شکیل الرحمن کو اُنھوں نے بابا جی کا خطاب دیا اور ٹی وی بہت سے شو انہیں کے نام سے کیے، زرائع کا کہنا ہے کے مُبشر لُقمان نے ایک کتاب “کھڑا سچ-بابا جی کے نام” سے پبلش بھی کر چُکے۔


بول پر اُنکا پروگرام “میری جنگ” کو پذیرائی تو ملی لیکن بول کے زمین بوس ہونیکے بعد میری جنگ بھی بن کھلے مُرجھا گیا۔

اُسوقت میڈیا کی جو صورتحال اور جو اکھاڑ پچھاڑ ہو رہا، اُس تناظُر میں مُجھے لگتا ہے کے مُبشر لُقمان کا جیٹ “آپ نیوز” کے ہیلی پیڈ پر لینڈ کر سکتا ہے۔

مُبشر لُقمان کیلیے دُعا کے وہ جہاں بھی جائیں اپنی بُہادری اور بے باکی کو اپنا طُرہ امتیاز بنا کر رکھیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here