جیسے ویرانے میں چپکے سے بہارآجائے

0
531

 دنیائے کرکٹ میں اب تک بولروں کی وکٹوں یابلے بازوں کے رنز کاریکارڈ رکھاجاتاہے لیکن اگرایک میچ میں زیادہ کیچ گرانے کاکوئی حساب کتاب ہے توآج لارڈزمیں شاہینوں نے اپنا نام اس میں درج کرالیاہے۔ راقم نے آج تک ورلڈکپ میں تودرکنار،کسی ٹیسٹ یا ٹی 20میں بھی اتنے کیچز چھوڑنے کی روایت نہیں دیکھی۔ خدا کی پناہ ۔۔۔ ایک مرحلے پرتویوں لگتاتھاکہ جیسے سب نے کیچ نہ پکڑنے کی قسم کھالی ہے۔ گوبطوربولر عامرکے ہاتھوں میں آنے والی گیند بلے بازوں کوگھمارہی ہے مگرجنوبی افریقہ کیخلاف میچ کے دورن ان فیلڈرزمیں سرفہرست رہے ،جن کے ہاتھوں میں سوراخ نظرآئے،ان کی ہمنوائی میں کپتان سرفراز، وہاب ریاض اورامام الحق بھی شامل رہے۔ بہرحال پاکستان نے 49رنز کی فتح پاکر ” مشن امپاسبل “ کا پہلی رکاوٹ عبورکرلی تاہم ابھی کیویزکیخلاف انتہائی مشکل جبکہ افغانستان اوربنگلہ دیش کیخلاف نسبتاًکم مشکل آزمائش کاسامنا ہے مگرشاہینوں کے اعصاب پروارم میچ میں افغان پڑوسیوں کے ہاتھوں شرمندگی سوارہوگی۔ پاکستان کوتینوں میچوں میں نہ صرف فتح بلکہ غیبی ہاتھ کی مددبھی درکارہے تاکہ کہیںبارش رنگ میںبھنگ نہ ڈال دے۔

اس کے ساتھ ساتھ اگرمگرکی اہمیت اپنی جگہہ برقراررہے گی۔ اب پاکستان کی بلے بازی کاتذکرہ کرلیتے ہیں ،جس کے دیدارکیلئے شائقین کی آنکھیں ترس گئی ہیں۔ فیض احمد فیض نے کہاتھا جیسے ویرانے میں چپکے سے بہارآجائے پاکستانی بلے بازبھی آج سہانے موڈمیں نظرآئے۔فخرزمان اورامام الحق نے44، 44رنزبنائے،دونوں کے درمیان 81رنز کی شراکت داری تسلی بخش رہی،جس کافائدہ آنے والے بلے بازوں نے جی بھرکراٹھایا۔ بابر اعظم امیدوں پرپورااترے اور 80گیندوں پر69رنز کی ذمہ دارانہ اننگزکھیلی۔ شعیب ملک کی جگہ موقع پانے والے حارث سہیل اورعمادوسیم نے رواں ورلڈکپ میں تیزترین 50رنز کی شراکت داری کرکے میچ کارخ کامیابی کی طرف گامزن کردیا۔پاکستان نے آخری 10اوورزمیں 91رنزبٹورے۔ بلے بازوکی بالاخراچھی کارکردگی کے بعدبولروں نے بھی اچھا آغازکیا۔ گو حفیظ کے پہلے ہی اوورمیں وہاب ریاض نے ڈی کاک کاکیچ چھوڑدیا مگرمحمدعامرنے اپنے پہلے اوورکی پہلی ہی گیند پرہاشم آملہ کومشہورزمانہ ان سوئنگ سے ایل بی ڈبلیو کردیا۔ فیلڈایمپائرنے آوٹ نہیں دیاتھا مگر نظرثانی اپیل کے دوران تھرڈایمپائر نے انگلی کھڑی کردی۔

پروٹیزکی امیدیں تب دم توڑگئیں ،جب کپتان فا ف ڈپلسس نے عامرکی گیند پرتاراچڑھادیا،جسے حفیظ نے تھام لیا۔ اس میچ کے بعد پاکستانی ٹیم ساتویں نمبرپر آگئی ہے جبکہ جنوبی افریقہ نہ صرف نویں نمبرپردھکیلی گئی ہے بلکہ اس کاورلڈکپ کاسفربھی ختم ہوگیاہے تاہم شاہینوں کومنزل کی طرف مارچ پاسٹ جاری رکھناہے توبلے بازوں اورفیلڈروں کوآئندہ امتحانوں میں کامیاب ہوناہوگا۔ ایک طرف عامر15وکٹیں لے کرسرفہرست ہیں تودوسری طرف کوئی پاکستانی بلے بازابھی تک سینچری نہیں بناسکا۔

مصنف کا تعارف

معین الدین حمید جنگ گروپ کیلئے بطورسپورٹس فوٹوگرافرسالہاسال خدمات سرانجام دیتے رہے کام کے سلسلے میں 25ممالک کے دورے بھی کئے،عالمی شہرت یافتہ دو کتابوں کے مصنف ہیں

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here