میڈیا کے بُرے حالات: میڈیا سیلز کے ایگزیکٹو ز نے ہمت ناں ہاری

0
1084

آجکل میڈیا سے روزانہ کی بُنیاد پر لوگوں کو نکالا جا رہا ہے، یہ تعداد سینکڑوں میں ہو چُکی، اور بہت سے میڈیا مُلازمین ایسے کے جن کو کئی کہی ماہ سے تنخواہیں نہیں ملیں۔ ان بُرے حالات میں میڈیا کے سیلز سے وابستہ لوگوں نے ہمت ناں ہاری اور ڈٹ کر حالات کا مُقابلہ کرنے کو تیار۔


پہلے سیلز ایگزیکٹو کاشف منظُور ہیں جو پچھلی ایک دہائی سے میڈیا سیلز سے مُنسلک، آجکل سلور سکرین میں میڈیا مینیجر کے فرائض سر انجام دے رہے ہیں، چند دن پہلے کاشف نے شام کے وقت میں حُسین چوک میں پارٹنر شپ میں نمکین تکہ اور کڑاہی کا کاروبار شُروع کیا ہے۔ میڈیا کے ان حالات میں کاشف کی ہمت کو داد ضرور دینی چاہیے۔ ہم دُعاگو ہیں کے اللہ تعالی کاشف منظور کو اس کاروبار میں دن دوگنی رات چوگنی ترقی کرے۔

آج کے ہمارے دوسرے میڈیا کے دوست جنہوں نے اپنا بزنس سٹارٹ کیا ہے وہ ہیں عصمت رمضان ہیں

جن کو کُچھ عرصہ پہلے روزنامہ جنگ ڈیجیٹل سے فارغ کر دیا گیا۔ پہلے سے ہی عصمت کو میڈیا کے حالات کا تدارک تھا، اور اُنھوں نے ایک ایجوکیشن میگزین کا ایک ریڈیشن لیا جسکا نام “ٹیوٹر” ہے۔ اب اُنھوں نے اُسکی پرنٹنگ کا کام شُروع کر دیا ہے۔ جنوری کے پہلے ہفتے میں اس ماہانہ شُمارے کی پہلی کاپی مارکیٹ میں آ جائیگی۔ جنگ گروپ کو خُدا حافظ کہنے کیبعد عصمت نے اب اپنا آفس بنایا ہے اور دن رات میگزین کے پہلے شُمارے کی بنوتی میں مصروف ہیں۔ ہم دُعاگو ہیں کے اللہ تعالی عصمت رمضان کےمیگزین کو بڑی کامیابی عطا فرمائے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here