سینکڑوں میڈیا کارکُنوں کی برطرفی، اینکرز خاموش، میڈیا خاموش

0
505

پیسے کی چمک ایسی ہوتی ہے کے ٹاپ بالی ووڈ ایکٹرز بھی امبانی کی بیٹی کی شادی میں لوگوں کو کھانا کھلائیں، سنتوش کُمیار کی بیٹی کے ہاتھ پیلے اس لیے ناں ہوئے کے سو بندوں کی بارات کو صحیح کھانا ناں کُھلا سکے۔ میڈیا میں پچھلے چند دنوں میں سینکڑوں لوگوں کو نکال دیا گیا، اُنکے چُولھے بُجھا دیے گئے، بچوں کی سکُول فیس کیلیے لوگوں کی منتیں، بجلی کے بل کی قسطوں میں ادائیگی کیلیے لیسکو کے دفتروں کے چکر، کس کو اپنا دُکھ سُنائیں، جن میڈیا ہاؤسز میں لوگوں کی خبریں بناتے سالوں گُذار دیے وہاں اپنی برطرفی پر ایک لائن کی خبر نہیں، ایک تیس سیکنڈ کا پیکج تک نہیں، اے پی این ایس اور پی بی اے                        بھی صرف مالکان کے زر خرید نکلے، میڈیا کارکُنوں کی آواز کون اُٹھائے؟

Image result for pakistan famous news anchors

چینلز مالکان سے ماہانہ لاکھوں رُوپے لینے والے بھلا میڈیا کارکُنان پر پروگرام کیوں کرینگے، پچیس ہزار سے اسی ہزار لینے والے لوگ کیسے لاکھوں لینے والوں کو مُتاثر کریں؟ ایک پروگرام کریں اور مالکان اُنکی چھُٹی کر دیں کون اُنکا نام لے، اور کیوں لے۔ یہاں ساری اپوزیشن اکٹھی ہو جائے اور زبردست احتجاج کرے کے سابقہ وزیر سعد رفیق کو اسمبلی میں لایا جائے، شہباز شریف کا اسمبلی میں لایا جائے، لیکن تھر کے مرتے بچوں کیلیے یہی اپوزیشن کبھی اکٹھی ناں ہو، ایک ٹکر تک جن کیلیے نہیں چلتا، دو دن سے سارے طُرم خان اینکرز زرداری اور عمومی سیاست پر ریٹنگز کی جنگ میں کُودے ہوئے لیکن کسی کے کان پر سینکڑوں میڈیا کارکُنان کی برطرفی کیخلاف جُوں تک نہیں رینگی، یہ مُنافقت کیوں؟ یہ دو ہرے معیار کیوں؟ پاکستانی میڈیا ناں کبھی آزاد تھا ناں کبھی ہو گا، آمریت سے انکو آزادی تو مل جاتی ہے لیکن اداروں کی اپنی آمریت سے کبھی آزادی نہیں ملے گی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here