لاھور قلندرز وہی پُرانی ڈگر پر؟ 

0
634

 

پی ایس ایل ایک کامیاب کرکٹ ایونٹ بن چُکا، اُسمیں موجود ٹیمیں ایک دوسرے پر برتری لینے کیلیے ہمیشہ سے سرگرم۔ کئی مہینوں پہلے ہی فرنچائز اپنی تیاریاں شُروع کر دیتے ہیں تاکہ ایونٹ کے موقع پر مُخالفین کو ٹف ٹائم دیا جا سکے۔
اُسوقت تک تین پی ایس ایل کے سیزن ہو چُکے اور ہر سیزن میں سب سے زیادہ مشہوری لاھور قلندرز کی ہوتی ہے لیکن پرفارمنس میں لاھور قلندرز ہمیشہ سب سے بُری رہی، کھلاڑیوں کی کارکردگی ہمیشہ سوالیہ نشان رہی۔ جہاں لاکھوں روپے ٹیم کی تشہیر اور نئے ٹیلنٹ پر لگائے جاتے ہیں لیکن ٹیم کبھی بھی وننگ کمبینیشن ناں بن سک۔: رانا فواد اور اُنکے بھائی اپنی طرف سے کوشش تو کرتے ہیں لیکن
: افسوس کے ٹیم کو کامیابی ابھی تک نہیں مل سکی، افسوس تو یہ ہے کے لاھور قلندرز کبھی دوسرے راؤنڈ میں بھی نہیں پہنچ سکے۔
ہر سال لاھور قلندرز پورے پاکستان سے ٹیلنٹ کیلیے پورے پاکستان سے ٹرائیلز کرتے ہیں، مُشکل ترین مراحل طے کرتے ہیں لیکن جب ٹیم پی ایس ایل کیلیے باہر نکلتی ہے تو مُخالفین کے سامنے ڈھیر ہو جاتی ہے۔
تقریباً تمام فرنچائز ہر ٹورنامنٹ کیبعد اپنی نئی صف بندی کرتی ہے لیکن لاھور قلندرز ہر ہار کیبعد کوئی نئی صف بندی نہیں کرتے سوائے کپتان تبدیل کرنے کے۔
صرف دُعا ہی کی جاُسکتی ہے کے لاھور قلندرز سیزن فور میں اگلے راؤنڈ میں پہنچ سکیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here