Curious case of 'Go Getters Group' – Strong babus-bureaucrats of Pakistan!

0
132

ایک شام نواز شریف صاحب کو کروز جہاز کی سیر کے لیے لیجایا گیا۔ اس جہاز میں کچھ صحافی بھی سوار تھے۔ وہیں پہلی دفعہ احد چیمہ کو دیکھا‘ جس کا تعارف نواز شریف صاحب نے خود کرایا۔ باقی تو سب جانتے تھے لیکن اس ہیرے سے میری پہلی ملاقات ہو رہی تھی۔ اس ہیرے کی نواز شریف نے بہت تعریفیں کیں۔ اگلے دن نواز شریف صاحب نے پریس کانفرنس کی جس میں انہوں نے چین کے وزٹ کے حوالے سے باتیں کیں؛ تاہم جس بات پر انہوں نے وقت صرف کیا وہ یہ تھی کہ اب ہمیں بڈھے بیورو کریٹس کی ضرورت نہیں‘ نوجوان اور go getters بیورو کریٹس کی ضرورت ہے‘ جو اصولوں کی آڑ لے کر کوئی پراجیکٹ نہ روکیں بلکہ جو انہیں کہا جائے وہ کر دیا کریں۔ دراصل یہ میسیج تھا پاکستان کی سینئر بیورو کریسی کے لئے کہ اب ہمیں آپ کی ضرورت نہیں رہی۔ ہمیں اب ایسے افسران کی ضرورت ہے جو سر جھکا کر ہر حکم کی تعمیل کریں اور ہمیں قانون سکھانے کی کوشش نہ کریں۔


پنجاب میں توقیر شاہ کو بیورو کریسی کا بابا بنا دیا گیا تو وفاق میں فواد حسن فواد کو۔ میڈیا کو ہینڈل کرنے کا کام ایک اور بابو وانی نے سنبھال لیا۔ گریڈ انیس بیس اکیس کے افسران نے اپنے سینئرز اور گریڈ بائیس پر حکمرانی شروع کی اور یوں اس ”گو گیٹرز‘‘ گروپ کا قیام عمل میں آیا۔ اس ڈی ایم جی کلاس کا ایک ہی اصول تھا کہ جو حکم شہباز شریف اور نواز شریف دیں‘ ہر صورت اسے پورا کرنا ہے، کسی اصول، قاعدہ، ضابطہ کی پروا نہیں کرنی۔ بندے مارنے پڑیں‘ مار دو۔ ملک کو لوٹنا پڑے‘ لوٹ لو۔ کس منصوبے پر کتنا پیسہ لگ رہا ہے، کتنا ضائع ہو رہا ہے، کون لوٹ رہا ہے، جعلی کمپنیاں بنا کر شریف خاندان کے کس کس بندے کو فیورز مل رہی ہیں، اس گو گیٹر گروپ نے پروا نہیں کرنی۔ یوں اس ڈی ایم جی کے گو گیٹر گروپ نے وہ کام سرانجام دیئے جس کا انجام گروپ کے گرو احد چیمہ کی گرفتاری کی شکل میں نکلا ہے۔

یہ گو گیٹرز ڈی ایم جی افسران اتنے بھی بھولے نہ تھے کہ صرف بادشاہوں کے خزانے بھرتے۔ان گو گیٹرز بابوز نے بادشاہوں کو بھی مزے کرائے اور خود بھی کیے۔ یہ تھا کرپٹ سیاسی ایلیٹ اور کرپٹ بیور کریسی کا کرپٹ گٹھ جوڑ‘ جس کا نعرہ تھا: آئیں سب مل جل کر لوٹتے ہیں۔
ان گو گیٹرز بابوز کے کارنامے سن، پڑھ اور دیکھ کر فرانسیسی ادیب الیگزینڈر ڈوماس کے ناول The Three Musketeer کے وہ تین جنگجو یاد آ گئے جن کا نعرہ تھا:All for one, one for all۔
اور یہ تھا شریف خاندان، ان کے گو گیٹر بابوز اور ان جنگجوئوں کے جادوئی کمالات

end

Courtesy: Rauf Klasra

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here