انعام اکبر : پاکستان ایڈورٹائزنگ انڈسٹری کا ایک بڑا نام

0
544

پاکستان کی ایڈورٹائزنگ انڈسٹری پچھلے کُچھ عرصہ سے بڑی خبروں میں ھے، جہاں پاکستان نے انٹرنیشنل لیول پر اپنی کریٹویٹی میں بہت سے انعامات جیتے وہیں پاکستان ایڈورٹائزنگ نے مُلکی لیول پر بھی کامیاب کیمپیئنز چلائیں۔
کُچھ عرصہ سے پاکستان ایڈورٹائزنگ کے بڑے نام انعام اکبر کو بھی نیب کیسز میں گھسیٹا جا رہا ھے، یہ تو وقت ہی بتائےگا کے انعام اکبر پر لگائے گئے الزامات کتنے درُست ہیں لیکن انعام اکبر کی ایڈورٹائزنگ انڈسٹری کیلیے خدمات قابل تحسین ہیں۔
 انعام اکبر نے بلا کسی انٹرنیشنل افیلیئیشن کے ایسی بڑی بڑی کیمپیئنز کیں جو یقیناً اُنکے مقابل ایجنسیوں کیلیے نا مُمکن تھا۔
سب سے بڑا کام اُنکا حکومتی اشتہارات کو ایک پروفیشنل اور کوالٹی ٹچ دینا تھا، اور شاید یہ مسٹر انعام اکبر کا ہی خاصہ تھا کے اُنھوں نے اپنے مضبوط فنانشیل مسل کیساتھ کڑوروں کی کیمپیئنز بغیر کسی ایڈوانس کے کیں۔

اسکے علاوہ شاید اُنکی ایڈورٹائزنگ ایجنسی واحد ایجنسی ھے جو بیک وقت وفاقی حکومت اور چاروں صوبائی حکومتوں کی کیمپیئنز بھی چلا چُکے۔
 انعام اکبر کی حیثیت  اخبارات اور چینلز کیلیے ہمیشہ  ایک مسیحا کی رہی، بعض بڑے نیوز چینلز پر جب بھی کوئی بُرا وقت آیا تو انعام اکبر نے اُن چینلز کو بُرے وقت میں سہارا دیا۔ حتی کے بعض ٹی وی چینلز کو اپنے مُلازمین کی تنخواہیں دینے کیلیے بھی انعام اکبر مدد کو آئے۔

اے پی این ایس نے بھی اپنی ایک پریس ریلیز میں کہا گیا ھے کے انعام اکبر کو فورا رہا کیا جائے. پریس ریلیز کا عکس


اگر بات چھوٹے ٹی وی چینلز اور اخبارات کی کریں تو یہ بات کہنے میں کوئی دو رائے نہیں کے انعام اکبر کی ایڈورٹائزنگ ایجنسی کے بزنس کیوجہ سے ہی وہ چینل اور اخبارات زندہ ہیں۔
کل جب میڈیا میں انعام اکبر کے حوالے سے خبریں منظر عام پر آئیں تو بعض میڈیا گروپس نے مُحسن کُشی کا مظاہرہ کیا اور اس خبر کو ایک سنسنی خیز خبر کے طور پر پیش کیا، جسکا بہت دُکھ ہوا۔
انعام اکبر کافی عرصہ سے زیر عتاب رہے ہیں، اب اس انڈسٹری کا حصہ ہوتے ہوئے ھمارا فرض بنتا ھے کے اب ھم اس مُشکل وقت میں اُنکے ہم رکاب رہیں۔


!اللہ آپ کا حامی و ناصر رہے

end

تحریر: عمران ملک

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here